پاکستان میں رواں سال کے صدقہ فطر، فدیہ صوم اور کفارے کے نصاب کا اعلان ہو گیا ہے۔ 190

پاکستان میں رواں سال کے صدقہ فطر، فدیہ صوم اور کفارے کے نصاب کا اعلان ہو گیا ہے۔

پاکستان میں صدقہ فطر، روزے کا فدیہ اور قسم توڑنے کے کفارے کے نصاب کا اعلان پرسوں بروز اتوار پاکستان کی مرکزی رؤیت ہلال کمیٹی کی طرف سے منظر عام پر آگیا ہے۔ اسلئے عوام صدقہ فطر، فدیہ صوم اور کفارے کے نصاب کے بارے میں جان کر اس قدر ادائیگی عمل میں لائیں۔

چیئرمین رؤیت ہلال کمیٹی مفتی منیب الرحمن صاحب کے مطابق رواں سال صدقہ فطر اور فدیہ کی کم از کم مقدار 100 روپے فی کس مقرر کرلی گئی ہے۔ شاید آپ کے علم میں ہو گاکہ گزشتہ سال بھی صدقہ فطر کا نصاب 100 روپے تھا۔مفتی منیب الرحمن نے بتایا کہ فطرے کے لئے دو کلو گندم کا نصاب سو روپے ہیں۔اور فدیے کیلئے جو 240 روپے ہیں کھجور 1600 روپے اور کشمش 1920 روپے نصاب ہے

تفصیلات کے مطابقمرکزی رویت ہلال کمیٹی کی جانب سے رواں برس فطرہ اور فدیہ کی کم از کم رقم 100 روپے فی کس مقرر کی گئی ہے۔صدقہ فطرانہ کے لیے گندم کے نصاب سے کم ازکم شرح 100 روپے ہے۔ جان بوجھ کر روزہ توڑنے کا کفارہ 60 مساکین کو کھانا کھلانا لازمی ہے جس کی رقم 6 ہزار روپے مقرر کی گئی ہے۔ قسم توڑنے کے کفارے کے لئے ایک ہزار روپے کی رقم مقرر کی گئی ہے۔ جو کے لحاظ سے فی کس فطرانہ اور فدیہ کی شرح 240 روپے مقرر کی گئی ہے، فدیہ صوم 7200 روپے، روزہ توڑنے کا کفارہ 14 ہزار 4 سو روپے اور قسم کا کفارہ 2400 روپے ہوگا۔کشمش کے مطابق فطرانہ 1920 روپے مقرر کیا گیا ہے جو زیادہ سے زیادہ شرح ہے۔ روزہ توڑنے کا کفارہ ایک لاکھ 15 ہزار 200 اور کفارہ قسم 19 ہزار 200  روپے ہوگا۔کھجور کے نصاب سے فطرانہ کے لیے 1600 روپے مقرر کئے گئے ہیں۔ روزہ توڑنے کا کفارہ 96 ہزار روپے اور قسم کا کفارہ 16 ہزار کے برابر ہوگا۔ فقہ جعفریہ کے مطابق بھی صدقہ فطرکی کم ازکم رقم 100 روپے کا اعلان کیا گیا ہے جب کہ فطرانہ کے لئے فقہ جعفریہ کے مطابق زیادہ تر گندم استعمال کرنے والے افراد تین کلو گندم فی کس یا اس کی مقامی قیمت ادا کریں۔مرکزی رویت ہلال کمیٹی کے چئیرمین مفتی منیب الرحمان کا کہنا ہے کہ لوگ اپنی حیثیت کے مطابق فطرہ اور فدیہ ادا کریں، عید الفطر کی رات گھر کے تمام افراد حتٰی کہ نومولود بچے کا فطرہ دینا بھی واجب ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں